عنوان: شوہر کے لیے "بندہ" استعمال کرنا کیسا ہے؟ (105152-No)

سوال: مفتی صاحب! ہمارے بعض علاقوں میں شوہر کو بندہ کہا جاتا ہے، یعنی یہ فلاں عورت کا بندہ ہے، کوئی عورت شوہر کے بارے میں کہتی ہے کہ "یہ میرا بندہ ہے"، جب کہ سارے انسان اللہ تعالی کے بندے ہیں، تو کیا کسی عورت کی طرف نسبت کر کے بندہ کہنا شرک میں داخل ہوگا یا نہیں؟

جواب: واضح رہے کہ شوہر کو "بندہ" محاورے کے طور پر کہا جاتا ہے، جیسے لفظ"میاں" جس طرح آقا، سردار اور اللہ تعالی کے لیے استعمال کیا جاتا ہے، اسی طرح شوہر کے لیے بھی استعمال ہوتا ہے، لہذا جس طرح "میاں" کا لفظ شوہر کے لیے استعمال کرنا شرک نہیں ہے، اسی طرح شوہر کے لیے"بندہ" کا لفظ استعمال کرنا بھی شرک نہیں ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کذا فی قواعد الفقہ:

الاشراک ہو اثبات الشریک فی الالوہیۃ ووجوب الوجود کماللمجوس أو بمعنی استحقاق العبادۃ کما لعبدۃ الاوثان ۔

(قواعد الفقہ ص:337 الرسالۃ الرابعۃ، التعریفات الفقیہ، طبع دارالکتاب دیونبد)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 225
shohat ke / key liye " banda " istemaal karna kesa he?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Beliefs

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © AlIkhalsonline 2021.