عنوان: غسل کے دوران کیے گئے وضو سے نماز پڑھنا(105808-No)

سوال: کیا فرماتے ہیں علمائے کرام اس مسئلے کے بارے میں کہ اگر کوئی شخص غسل سے پہلے وضو کر لے اور بعد میں اسی غسل کے وضو سے نماز پڑھ لے، تو کیا اس کی نماز درست ہو جائے گی؟

جواب: غسل سے کامل طہارت حاصل ہو جاتی ہے، لہذا اسی غسل کے وضو سے نماز پڑھنا بلا کراہت جائز ہے، بشرطیکہ غسل کے بعد کوئی ناقض وضو عمل نہ کیا ہو۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی الحدیث النبوی:

عن عائشۃ رضي اللّٰہ عنہا قالت: کان النبي صلی اللّٰہ علیہ وسلم لا یتوضأ بعد الغسل۔

(سنن الترمذي ج1 ص30)

کذا فی المرقاۃ:

وقال علي القاريؒ: أي اکتفاء بوضوئہ الأول في الغسل وہو سنۃ أو باندراج ارتفاع الحدث الأصغر تحت ارتفاع الأکبر بإیصال الماء إلی جمیع أعضائہ وہو رخصۃ۔

(مرقاۃ المفاتیح ج:2ص:38)


واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

(مزید سوالات و جوابات کیلئے ملاحظہ فرمائیں)
http://AlikhlasOnline.com

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Purity & Impurity

28 Nov 2020
11 Rabi Al-Akhar 1442

Copyright © AlIkhalsonline 2020. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com