عنوان: تقلید کا حکم(107343-No)

سوال: مفتی صاحب ! امام ابو حنیفہ، امام مالک، امام شافعی اور امام احمد بن حنبل رحمہم اللہ میں سے کسی ایک امام کی تقلید کی جاتی ہے، سوال یہ ہے کہ تقلید کا کیا حکم ہے؟

جواب: جو شخص خود مجتہد نہ ہو، اس پر واجب ہے کہ وہ کسی مجتہد کی تقلید کرے اور چونکہ قدیم زمانہ سے صورت مسئولہ میں مذکورہ چاروں اماموں کی تقلید چلی آرہی ہے اور چاروں ائمہ برحق ہیں، تو ان میں سے کسی ایک کی تقلید کرنا ضروری ہے، خاص طور پر ہمارے زمانہ میں جبکہ علم کا فقدان پایا جاتا ہے اور ہمتیں کمزور اور پست ہوچکی ہیں اور مسلمانوں کے دلوں سے اسلام کا درد مٹ چکا ہے اور خواہش پرستی ہر شخص کا مزاج بن چکی ہے اور ہر شخص چاہتا ہے کہ اگر اس کی خواہشات کے مطابق اس کے سامنے اسلام پیش کیا جائے گا، تو وہ عمل کرے گا، لہذا اس صورت حال میں کسی متعین امام کی تقلید کرنا اور بھی ضروری ہوجاتا ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی روح المعانی:
مقتضی کلامھم انہ لافرق بین تقلید احد ائمۃ المذاھب الاربع وتقلید غیرہ من المجتھدین۔ نعم ذکر العلامۃ ابن الحجر وغیرہ انہ یشترط فی تقلید الغیر ان یکون مذھبہ مدونا محفوظ الشروط والمعتبرات۔
(ج: 14، ص: 148)

وفی اعلاء السنن:

وھؤلاء یجب علیھم تقلید المجتھد فان اجتھدوا ضلوا وأضلوا وھؤلاء ھم اھل الرأی الذین ذمھم الصحابۃ والتابعون۔۔۔الخ
(ج: 20، ص: 232)

وفی حجۃ ﷲ البالغۃ:

ان ھذہ المذاھب الاربعۃ المدونۃ قد اجتمعت الامۃ او من یعتد بہ منھا علی جواز تقلیدھا الی یومنا ھذا وفی ذلک من المصالح مالایخفی لاسیما فی ھذہ الایام۔۔۔الخ۔
(ج: 1، ص: 154)

وفی شرح عقود رسم المفتی:

ولما انقطع المفتی المجتہد فی زماننا ولم یبق الا المقلد المحض وجب علینا اتباع التفصیل۔
( ص: 21)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 164

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Beliefs

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com