عنوان: مسواک کا مذاق اڑانے والے شخص کا حکم(107487-No)

سوال: کل کی بات ہے کہ میں ظہر کی نماز کے لئے مسواک کر رہا تھا کہ میرا دوست آیا اور مسواک کے بارے میں کہنے لگا کہ "یہ کیا ہے" یا اس نے یوں کہا کہ "یہ لکڑی کیسی ہے"، سوال یہ ہے کہ کیا اس طرح کہنے سے وہ گنار گار تو نہیں ہوگا؟

جواب: صورتِ مسئولہ میں اگر آپ کے دوست نے مذکورہ بات مسواک کی لکڑی کے بارے میں پوچھنے کے لئے کہی تھی کہ کونسے درخت کی لکڑی ہے، تو اس بات کے کہنے میں کوئی حرج نہیں ہے اور اگر مذکورہ بات مسواک کا مذاق اڑانے کے لئے کہی تھی، تو آپ کا دوست مسواک جیسی عظیم سنت کا مذاق اڑانے کی وجہ سے دائرہ اسلام سے خارج ہوگیا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی التاتارخانیۃ:

من لم یقر ببعض الانبیاء ……او لم یرض بسنۃ من سنن المرسلین علی م السلام فقد کفر۔

(ج: 5، ص: 477)

وفیہ ایضا:

قیل ھذا استخفاف بسنۃ رسول ﷲ ﷺ وانہ کفر ……وکذالک فی سائر السنن خصوصا فی سنۃ ھی معروفۃ وثبوتھا بالتواتر کالسواک وغیرہ۔

(ج: 5، ص: 482)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 146

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Beliefs

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com