عنوان: کیا گنے کے رس سے وضو کرسکتے ہیں؟(107835-No)

سوال: مفتی صاحب ! اگر کوئی شخص ایسی جگہ پر ہو، جہاں پانی دستیاب نہ ہو، بلکہ اس شخص کے پاس صرف گنے کا رس ہو، تو کیا وہ اس سے وضو کرسکتا ہے؟

جواب: وضو صحیح ہونے کے لئے مطلق پانی کا ہونا شرط ہے، جبکہ گنے کا رس مطلق پانی نہیں ہے، لہذا اس سے وضو کرنا جائز نہیں ہے۔

اگر کسی شخص کو پانی نہ مل سکے اور اس کے پاس صرف گنے کا رس ہو، تو ایسا شخص گنے کے رس سے وضو نہیں کرے گا، بلکہ تیمم کرکے نماز پڑھے گا۔

دلائل:

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


کما فی الشامیۃ:

(و) لا(بعصیر نبات) أی معتصر من شجر اوثمر لانہ مقید۔

(ج: 1، ص: 180، ط: دار الفکر)

وفی الھندیۃ:

لایجوز التوضؤ بماء البطیخ والقثاء والقتد ولا بماء الورد ولابشیٔ من الاشربۃ ولا بغیرھا من المائعات نحو الخل۔

(ج: 1، ص: 21، ط: دار الفکر)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 215
kia gannay kay rass say wozu kar saktay hain?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Purity & Impurity

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.