عنوان: کلی اور ناک میں پانی ڈالے بغیر کیے جانے والے غسل کا حکم(109081-No)

سوال: مفتی صاحب ! اگر غسل میں وضو نہیں کیا، تو کیا بغیر کلی اور ناک میں پانی ڈالے بغیر بھی وضو جاتا ہے، کیونکہ باقی اعضاء تو غسل میں دھل جاتے ہیں؟ براہ کرم رہنمائی فرمادیں۔

جواب: جی ہاں! اس سے وضو ہوجاتا ہے، بشرطیکہ وضو والے اعضاء پر اچھے طریقہ سے پانی پہنچ جائے، کیونکہ وضو کے لیے کلی اور ناک میں پانی ڈالنا فرض نہیں ہے۔
تاہم غسل کا سنت طریقہ یہی ہے کہ کلی اور ناک میں پانی ڈال کر پورے وضو کا اہتمام کریں، جبکہ فرض غسل کے لیے کلی اور ناک میں پانی ڈالنا فرض ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

السنن الكبرى للبيهقي: (رقم الحديث: 868، 55/2، ط: مركز هجر للبحوث والدراسات، القاهرة)
عن عائشة قالت: كان رسول الله صلى الله عليه وسلم لا يتوضأ بعد الغسل من الجنابة.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 246
kulli / kurli or nak / naak / nose me / mein pani / water dale / daley baghair kiye janey wale ghusal ka hokom / hokum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Purity & Impurity

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.