عنوان: ایسی شیلڈ کا حکم جس پر مورت بنی ہوئی ہو(11180-No)

سوال: ہماری اورگنائزیشن یونٹ (جہاں ہم کام کرتے ہیں) اپنے کام کرنے والوں کو شیلڈ گفٹ میں دیتی ہے، مجھے جو شیلڈ ملا ہے، اس کے اطراف میں دو سپاہیوں اور بیچ میں ہاتھی کی تصویر ہے، کیا یہ اپنے کمرے میں رکھنا جائز ہے؟ رہنمائی فرمائیں۔

جواب: ایسی شیلڈ بنانا یا گھر میں رکھنا ہرگز جائز نہیں ہے جس پر مورت بنی ہوئی ہو یا مجسمہ بنا ہوا ہو، ایک حدیث مبارکہ میں ہے:"رحمت كے فرشتے اس گھر میں داخل نہیں ہوتے، جس میں تصویر، کُتا يا جنبی ہو" (ابوداود: حدیث نمبر 227)
لہٰذا پوچھی گئی صورت میں اس شیلڈ کو گھر میں رکھنے سے گریز کریں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

سنن أبي داود: (رقم الحديث: 227، ط: مؤسسة الرسالة)

حدثنا حفص بن عمر، حدثنا شعبة، عن علي بن مدرك، عن أبي زرعة بن عمرو بن جرير، عن عبد الله بن نجي، عن أبيه عن علي، عن النبي - صلى الله عليه وسلم - قال: "لا تدخل الملائكة بيتا فيه صورة ولا كلب ولا جنب".

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 369 Oct 11, 2023
ese shield ka hukum jis per morat bani hui ho

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Prohibited & Lawful Things

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.