عنوان: سنتوں سے پہلے پڑھے جانے والے وتر کے بعد سنتوں کے ادا کرنے کا حکم (15777-No)

سوال: مفتی صاحب! اگر عشاء کی وتر نماز میں یاد آئے کہ مجھے سنتیں پڑھنی ہیں تو کیا ان سنتوں کو بعد میں پڑھا جائے یا نماز ہوجائے گی؟

جواب: پوچھی گئی صورت میں وتر کی نماز درست ہو جائے گی، لیکن سنتوں سے پہلے وتر پڑھنے کی وجہ سے عشاء کے بعد پڑھی جانے والی دو رکعت سنتِ مؤکدہ معاف نہیں ہوں گی، بلکہ ایسی صورت میں وتر مکمل کرنے کے بعد وقت کے اندر ان سنتوں کو پڑھنا ہوگا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الدر المختار مع رد المحتار: (530/1، ط: دار الفكر)

ويكره تأخير السنة إلا بقدر اللهم أنت السلام إلخ. قال الحلواني: لا بأس بالفصل بالأوراد واختاره الكمال. قال الحلبي: إن أريد بالكراهة التنزيهية ارتفع الخلاف قلت: وفي حفظي حمله على القليلة، ويستحب أن يستغفر ثلاثا ويقرأ آية الكرسي والمعوذات ويسبح ويحمد ويكبر ثلاثا وثلاثين، ويهلل تمام المائة ويدعو ويختم بسبحان ربك.

واللّٰه تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 333 Mar 01, 2024
sunato se pehle padhe parhe jane wale witr witar ke baad bad sunat sunnat ka ada karne ka hukum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Salath (Prayer)

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.