عنوان: کھانے کے بعد نماز سے پہلے کلی کرنا(102701-No)

سوال: حضرت! ظہر کی نماز میں وضو کیا اور عصر کی نماز تک وضو قائم رہا، لیکن بیچ میں کچھ کھایا پیا ہے، تو کیا کلی کرنا ضروری ہے یا اس کے بغیر بھی نماز ہوجاتی ہے؟

جواب:
واضح رہے کہ کھانا کھانے کے بعد نماز سے پہلے کلی کرنا مستحب ہے، البتہ کلی کیے بغیر نماز پڑھ لی، تو نماز ادا ہوجائے گی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:
صحيح البخاري:
" أخبرنا مالك، عن يحيى بن سعيد، عن بشير بن يسار، مولى بني حارثة أن سويد بن النعمان أخبره أنه خرج مع رسول الله صلى الله عليه وسلم عام خيبر، حتى إذا كانوا بالصهباء، وهي أدنى خيبر، «فصلى العصر، ثم دعا بالأزواد، فلم يؤت إلا بالسويق، فأمر به فثري، فأكل رسول الله صلى الله عليه وسلم وأكلنا، ثم قام إلى المغرب، فمضمض ومضمضنا، ثم صلى ولم يتوضأ»".
(ج1، ص52)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

(مزید سوالات و جوابات کیلئے ملاحظہ فرمائیں)
http://AlikhlasOnline.com

نماز میں مزید فتاوی

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Salath (Prayer)

29 May 2020
جمعہ 29 مئی - 5 شوّال 1441

Copyright © AlIkhalsonline 2020. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com