عنوان: مسبوق کا امام کے پیچھے ثناء پڑھنے اور قعدہ میں دوردشریف پڑھنے کا حکم (102705-No)

سوال: السلام علیکم، اگر جماعت کی نماز میں پہلی رکعت کے علاوہ کسی بھی رکعت میں شامل ہوئے اور اس میں ثناء پڑھ لی تو کیا حکم ہے؟ اسی طرح جماعت کا آخری قعدہ میں تشھد کے بعد درود اور دعائیں بھی پڑھ لیں، جب کہ سلام کے بعد اپنی بقایا رکعتیں پوری کرنی ہے، اس کی وضاحت فرمادیں۔ جزاک اللہ

جواب: اگر کوئی شخص نماز میں امام کے ساتھ شروع سے شریک نہ ہوا ہو، بلکہ درمیان میں شامل ہوا ہو تو اس کے لیے ثناء پڑھنے سے متعلق یہ حکم ہے کہ درمیان میں ثناء نہیں پڑھے، بلکہ جب وہ امام کے سلام پھیرنے کے بعد کھڑا ہو تو اس وقت ثناء پڑھے۔
اسی طرح مسبوق کے لیے مستحب یہ ہے کہ قعدۂ اخیرہ میں التحیات اس طرح ٹھہر ٹھہر کر پڑھے کہ امام کے سلام پھیرنے تک ختم کرلے ، اس کے لیے درود شریف اور دعا وغیرہ پڑھنے کا حکم نہیں ہے، لیکن اگر پڑھ لے توسجدہ سہو لازم نہیں ہو گا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

دلائل:

لما فی الدرالمختار :
ﻭاﻟﻤﺴﺒﻮﻕ ﻣﻦ ﺳﺒﻘﻪ اﻹﻣﺎﻡ ﺑﻬﺎ ﺃﻭ ﺑﺒﻌﻀﻬﺎ ﻭﻫﻮ ﻣﻨﻔﺮﺩ) ﺣﺘﻰ ﻳﺜﻨﻲ ﻭﻳﺘﻌﻮﺫ ﻭﻳﻘﺮﺃ، ﻭﺇﻥ ﻗﺮﺃ ﻣﻊ اﻹﻣﺎﻡ ﻟﻌﺪﻡ اﻻﻋﺘﺪاﺩ ﺑﻬﺎ ﻟﻜﺮاﻫﺘﻬﺎ۔(باب الامامة: ج: 1، ص: 596، ط: دارالفکر،بیروت۔ )

وفی الھندیۃ:
ومنھا ان المسبوق ببعض الرکعات یتابع الامام فی التشہد الاخیرو اذا اتم التشہد لا یشتغل بما بعدہ من الدعوات ثم ما ذا یفعل تکلموا فیہ وعن ابن شجاع انہ یکرر التشہد ای قولہ أشہد ان لا الہ الا اﷲ وھو المختار کذا فی الغیاثیۃ والصحیح أن المسبوق یترسل فی التشہد حتی یفرغ عند سلام الامام کذا فی الوجیز للکردری وفتاویٰ قاضی خان وھکذا فی الخلاصۃ وفتح القدیر۔(باب الامامة،اﻟﻔﺼﻞ اﻟﺴﺎﺩﺱ ﻓﻴﻤﺎ ﻳﺘﺎﺑﻊ اﻹﻣﺎﻡ ﻭﻓﻴﻤﺎ ﻻ ﻳﺘﺎﺑﻌﻪ: ج: 1، ص: 91، ط: دارالفکر،بیروت۔ )

واللہ تعالی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

(مزید سوالات و جوابات کیلئے ملاحظہ فرمائیں)
http://AlikhlasOnline.com

نماز میں مزید فتاوی

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Salath (Prayer)

06 Dec 2019
جمعہ 06 دسمبر - 8 ربيع الثانی 1441

Copyright © AlIkhalsonline 2019. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com