عنوان: کرایہ وقت پر نہ دینے کی صورت میں جرمانہ عائد کرنا(3291-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! اگر کرائے دار دکان کا کرایہ مالک کو مقررہ تاریخ میں ادا نہ کرے، تو کیا مالک مکان کے لیے یہ جائز ہے کہ وہ تاخیر کی وجہ سے کرائے دار پر کسی قسم کا جرمانہ عائد کرے؟

جواب: واضح رہے کہ مالک کے لئے کرائے دار سے مالی جرمانہ وصول کرنے کی شرعاً کوئی گنجائش نہیں ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

رد المحتار: (مطلب فی التعزیر باخذ المال، 61/4)
قال في الفتح: عن أبي یوسف رحمہ اللّٰہ تعالیٰ یجوز التعزیر للسلطان بأخذ المال، وعندہما وباقي الأئمۃ لا یجوز، ومثلہ في المعراج، وظاہرہ أن ذٰلک روایۃ عن أبي یوسف۔ قال في الشرنبلالیۃ: ولا یفتی بہٰذا لما فیہ من تسلیط الظَّلَمۃ علی أخذ المال للناس فیما یأکلون الخ۔ ومثلہ في شرح الوہبانیۃ عن ابن وہبان۔ وأفاد في البزازیۃ: أن معنی التعزیر بأخذ المال علی القول بہ: إمساک شيء من مالہ عندہ مدۃً لینزجر، ثم یعیدہ الحاکم إلیہ، لا أن یأخذہ الحاکم بنفسہ أو لبیت المال کما یتوہمہ الظلمۃ؛ إذ لا یجوز لأحد من المسلمین أخذ مال أحد بغیر سبب شرعي۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 628 Jan 13, 2020
Kiraya waqt par na dainay ki soorat mein jurmana aaid karna, dene, sorat, surat, main, ayad, Penalty for non-payment of rent on time, Late payment of rent and addition of penalty

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Prohibited & Lawful Things

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.