عنوان: آنکھوں میں سرمہ لگانا سنت ہے(3818-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! سرمہ لگانا شریعت کی نظر میں کیسا ہے؟ میں نے ایک پروگرام میں سنا کہ ایک ڈاکٹر صاحب کہہ رہے تھے کہ علم طب میں سرمہ لگانا نقصان دہ ہے، کیا یہ بات صحیح ہے؟

جواب: واضح رہے کہ آنکھوں میں سرمہ لگانا بلا شبہ سنت ہے، اور جہاں تک ڈاکٹر صاحب کی تحقیق ہے، تو یہ تجربے کی روشنی میں بالکل بے بنیاد ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

سنن الترمذي: (باب ما جاء في الاکتحال، رقم الحدیث: 1757، ط: دار الغرب الاسلامي)
عن ابن عباس، أن النبي صلى الله عليه وسلم قال: اكتحلوا بالإثمد فإنه يجلو البصر، وينبت الشعر، وزعم أن النبي صلى الله عليه وسلم كانت له مكحلة يكتحل بها كل ليلة ثلاثة في هذه، وثلاثة في هذه.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 756 Mar 18, 2020
Aankhon, mein, surmah, surma, lagana, lagaana, sunnat, hay, he, Ankhon, Sunnat e Nabvi, surma laganae ki sunnat, surma ki sunnat, kajal, The use of surma in eyes is Sunnah, Surma, Kohl, Kajal, Eye cosmetic, Antimony, Applying, Putting

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Prohibited & Lawful Things

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.