عنوان: روزہ کی حالت میں قے ہونا(4252-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! اگر روزے دار کو دن میں قے ہوجائے تو اس کے روزے کا کیا حکم ہے؟

جواب: اگر روزہ کے دوران بلا اختیار اور بلا قصد خودبخود قے ہوگئی، تو روزہ فاسد نہیں ہوگا، چاہے قئے تھوڑی ہو یا زیادہ۔

اگر اپنے اختیار سے قے کی، اور منہ بھر کر قے ہوگئی، تو روزہ فاسد ہوجائے گا، اور اگر منہ بھر کر قے نہیں ہوئی، تو روزہ فاسد نہیں ہوگا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الدر المختار: (باب ما یفسد الصوم و ما لا یفسدہ، 415/2، ط: دار الفکر)

وإن ذرعہ القيء وخرج ولم یعد لا یفطر مطلقاً ملأ أو لا، فإن عاد بلا صنعہ ولو ہو ملأ الفم مع تذکرہ للصوم لا یفسد، خلافاً للثاني، وإن أعادہ أفطر إجماعًا إن ملأ الفم وإلا لا، ہوالمختار۔ وإن استقاء أي طلب القي عامداً أي متذکرًا لصومہ إن کان مِلء الفم فسد بالإجماع مطلقًا، وإن أقل لا، عند الثاني وہو الصحیح۔ لکن ظاہر الروایۃ کقول محمدؒ إنہ یفسد کما في الفتح عن الکافي۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 2061 May 01, 2020
rozay k haalat mai ulti / qay hona , Vomiting while fasting

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Sawm (Fasting)

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.