عنوان: قرآن کے علاوہ دوسری آسمانی کتابوں مثلاً تورات، انجیل وغیرہ کو بغیر وضو چھونے کا حکم(105589-No)

سوال: اسلام علیکم مفتی صاحب قرآن مجید کو بغیر وضو کے ہاتھ لگانا جائز نہیں ہے، کیا اس کے علاوہ دوسری آسمانی کتابوں تورات، انجیل وغیرہ کو بھی بغیر وضو ہاتھ لگانا جائز نہیں ہے؟

جواب: جی ہاں! قرآن مجید کے علاوہ دوسری آسمانی کتابوں مثلاً تورات، انجیل، زبور کو بھی بغیر وضو ہاتھ لگانا جائز نہیں ہے، البتہ فرق یہ ہے کہ قرآن مجید کے کسی بھی حصے کو بغیر وضو ہاتھ نہیں لگا سکتے، جبکہ دوسری آسمانی کتابوں کے صرف لکھے ہوئے حصے کو ہاتھ لگانا منع ہے، بغیر لکھے ہوئے حصے کو ہاتھ لگانا منع نہیں ہے۔

دلائل:

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


کذا فی البحر الرائق:

لایجوز مس المصحف کلہ المکتوب وغیرہ بخلاف غیرہ فانہ لایمنع الا مس المکتوب کذا ذکرہ فی السراج۔

(ص:201؍ج: 1 باب الحیض)

کذا فی حاشیہ الطحطاوی:

ویحرم (مسھا) ای الایۃ لقولہ تعالیٰ لا یمسہ الا المطھرون سواء کتب علی قرطاس او درھم او حائط (الا بغلاف) قولہ (ویحرم مسھا) ۔۔۔۔۔وکذا سائر الکتب السماویۃکما فی القہستانی عن الذخیرۃ، نعم ینبغی ان یخص مالم یبدل منہا،
وفیما عدا المصحف انما یحرم مس الکتابۃ لا الحواشی ویحرم الکل فی المصحف لان الکل تبع لہ کما فی الحدادی وغیرہ الخ

(طحطاوی علی مراقی الفلاح ص 77 باب الحیض والنفاس والا ستحاضۃ )

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 747
quran kay elawa doosri aasmaani kitabon for example toraat injeel wagaira ko bagair wozu choonay ka hukum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Miscellaneous

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.