عنوان: غیر سید کا خود کو سید کہنے کا شرعی حکم(7104-No)

سوال: مفتی صاحب! ایک شخص خود کو سید لکھتا ہے، کیا شرعا کسی غیر سید کا خود کو سید کہنا جائز ہے؟

جواب: جو شخص واقعتاً سید نہیں ہے، اس کا اپنے آپ کو سید لکھنا بڑا گناہ ہے، کیونکہ حدیث شریف میں آتا ہے : "جو آدمی اپنا نسب بدل دیتا ہے، اس پر جنت حرام ہے"، لہذا اس سے اجتناب کرنا ضروری ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

صحيح البخاري: (رقم الحديث: 6766، ط: دار طوق النجاة)
حدثنا مسدد، حدثنا خالد هو ابن عبد الله، حدثنا خالد، عن أبي عثمان، عن سعد رضي الله عنه، قال سمعت النبي صلى الله عليه وسلم، يقول: «من ادعى إلى غير أبيه، وهو يعلم أنه غير أبيه، فالجنة عليه حرام».

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 2579 Mar 19, 2021
gair syed ka khud ko syed kehne ka shar'ee hukum, The Shariah order of a non-Sayyid to call himself a Sayyad / syed

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Prohibited & Lawful Things

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.