عنوان: فجر کے بعد سونا (107277-No)

سوال: مفتی صاحب ! رہنمائی فرمائیں کہ فجر کی نماز ادا کر نے کے فورا بعد سو سکتے ہیں؟ یا فورا سونا منع ہے؟ جزاک اللہ

جواب: نمازِ فجر کے بعد بغیر کسی ضرورت کے طلوع آفتاب(سورج نکلنے) سے پہلے سونا مکروہ ہے، حدیث میں آتا ہے کہ اللہ تبارک وتعالی صبح صادق سے لے کر طلوع آفتاب تک مخلوق کے لیے رزق تقسیم کرتے ہیں، یعنی جو لوگ اس پورے وقت میں غافل رہتے ہیں، وہ رزق کی برکت سے محروم رہتے ہیں۔ لہذا طلوع آفتاب سے پہلے بلا ضرورت سونے سے اجتناب کرنا چاہیے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کذا فی شعب الایمان:

عن فاطمة بنت محمد صلی اللہ علیہ وسلم قالت: مرَّ بي رسول اللہ -صلی اللہ علیہ وسلم- وأنا مضطجعة متصبحة، فحرکني برجلہ ثم قال: یا بنیّة قومي واشہدي رزق ربّک، ولا تکوني من الغافلین؛ فإن اللہ یقسم أرزاق الناس ما بین طلوع الفجر إلی طلوع الشمس“

( ۴۴۰۵، فصل في ا لنوم الذي نعمة اللہ الخ)

کذا فی الھندیۃ:

"ويكره النوم في أول النهار وفيما بين المغرب والعشاء".

(ج5، ص376، دارالفکر)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 389
fajar kay baad sona

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Prohibited & Lawful Things

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.