عنوان: تراویح میں آیت سجدہ پڑھنے سے پہلے سجدہ کرنا(107362-No)

سوال: مفتی صاحب ! آج ایک مسئلہ پیش آیا ہے کہ حافظ صاحب کو تراویح میں ایک جگہ پر سجدہ تلاوت کرنا تھا، مگر ایک آیت سجدہ سے پہلے ہی کر لیا، کیا سجدہ تلاوت ہو گیا ہے یا دوبارہ ادا کرنا پڑے گا یا پھر سے دوبارہ تلاوت کر کے ادا کرنا پڑے گا؟

جواب: آیتِ سجدہ کی تلاوت سے پہلے جو سجدہ کیا گیا، وہ بے موقع ہوا، اس لئے اس کا کوئی اعتبار نہیں ہوگا، کیونکہ وہ سجدہ واجب ہونے سے پہلے کیا گیا، لہٰذا آیت سجدہ پڑھنے کے بعد دوبارہ سجدہ کرنا لازم ہوگا اور آخر میں سجدہ سہو بھی کرنا ہوگا اور اگر آیتِ سجدہ پڑھنے کے بعد دوبارہ سجدہ نہیں کیا، تو واجب چھوٹنے کی وجہ سے اب توبہ و استغفار کرنا ہوگا، نماز کے اندر چھوٹنے والا سجدہ نماز کے باہر ادا نہیں ہوتا ہے۔

دلائل:

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


لما فی الھندیۃ:

وفي الولوالجية الأصل في هذا أن المتروك ثلاثة أنواع فرض وسنة وواجب ففي الأول أمكنه التدارك بالقضاء يقضي وإلا فسدت صلاته وفي الثاني لا تفسد؛ لأن قيامها بأركانها وقد وجدت ولا يجبر بسجدتي السهو وفي الثالث إن ترك ساهيا يجبر بسجدتي السهو وإن ترك عامدا لا، كذا التتارخانية.۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ولا يجب السجود إلا بترك واجب أو تأخيره أو تأخير ركن أو تقديمه أو تكراره أو تغيير واجب بأن يجهر فيما يخافت وفي الحقيقة وجوبه بشيء واحد وهو ترك الواجب، كذا في الكافي.

(ج: ۱، ص: ۱۲۶، ط: دار الفکر)

وفیھا ایضاً:

والسجدة التي وجبت في الصلاة لا تؤدى خارج الصلاة، كذا في السراجية وهكذا في الكافي، ويكون آثما بتركها

(ج: ۱، ص: ۱۲۶، ط: دار الفکر)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 207
taraweeh mai aayat e sajda parhne say pehle sajd karna

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Taraweeh Prayers

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.