عنوان: کیا فلیٹ میں پانچوں وقت کی نماز اور تراویح باجماعت پڑھ سکتے ہیں؟(107771-No)

سوال: ہم جس جگہ رہتے ہیں، وہاں بہت سے فلیٹ ہیں، اور ان کے قریب کوئی مسجد نہیں ہے، بلکہ کافی فاصلہ پر ایک مسجد ہے، تو کیا ہم فلیٹ والے کسی فلیٹ میں پانچوں وقت کی نماز اور تراویح با جماعت پڑھ سکتے ہیں یا نہیں؟

جواب: نماز صحیح ہونے کے لئے مسجد ہونا شرط نہیں ہے، بلکہ زمین کے کسی حصہ میں بھی نماز پڑھی جاسکتی ہے، لہذا صورتِ مسئولہ میں آپ لوگوں کے لئے فلیٹ میں جماعت سے پانچوں وقت کی نماز اور تراویح پڑھنا جائز ہے، البتہ مسجد میں نماز پڑھنے کا ثواب زیادہ ہے اور مذکورہ صورت میں آپ لوگ اس ثواب سے محروم رہیں گے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی صحیح البخاری:

قال: حدثنا جابر بن عبد الله، قال: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم: " أعطيت خمسا لم يعطهن أحد من الأنبياء قبلي: نصرت بالرعب مسيرة شهر، وجعلت لي الأرض مسجدا وطهورا، وأيما رجل من أمتي أدركته الصلاة فليصل، وأحلت لي الغنائم، وكان النبي يبعث إلى قومه خاصة، وبعثت إلى الناس كافة، وأعطيت الشفاعة "

(ج: 1، ص: 95، ط: دار طوق النجاۃ)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Views: 25

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Salath (Prayer)

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com