عنوان: موبائل میں محفوظ قرآن مجید کو بیت الخلاء لے کر جانا(879-No)

سوال: ہمارے موبائل میں قرآن کی ایپ ہوتی ہے تو موبائل بیت الخلاء جاتے وقت باہر چھوڑ دینا بہتر ھے یا اندر لیکر جاسکتے ہیں ؟

جواب: اگر قرآن مجید موبائل کی اسکرین پر کھلا ہوا ہو تو بیت الخلاء لے کر جانا درست نہیں ہے، لیکن اگر اسکرین پر قرآن مجید کھلا ہوا نہیں ہے تو جیب میں رکھ کر بیت الخلاء جانے میں کوئی حرج نہیں ہے ۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

حاشیۃ الطحطاوی علی مراقی الفلاح: (ص: 54، ط: دار الکتب العلمیۃ)
"ويكره الدخول للخلاء ومعه شيء مكتوب الخ" لما روى أبو داود والترمذي عن أنس قال كان رسول الله صلى الله عليه وسلم إذا دخل الخلاء نزع خاتمه أي لأن نقشه محمد رسول الله قال الطيبي فيه دليل على وجوب تنحية المستنجي اسم الله تعالى واسم رسوله والقرآن اه

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 595 Feb 16, 2019
mobile mein mehfooz/mahfooz quran shareef ko bait-ul-khala (mein) le/lay kar jaana , taking the quran shareef that is saved in the phone/mobile into the washroom/bathroom/toilet

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Prohibited & Lawful Things

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.