عنوان: امتحانات کی وجہ سے رمضان المبارک کے روزے نہ رکھے ہوں تو ان کی قضاء لازم ہے(108856-No)

سوال: میری عمر 43 سال ہے، میں نے اپنے میٹرک کے امتحان کی وجہ سے 21 روزے نہیں رکھتے تھے،اس کے علاؤہ میرے ذمہ 65 مزید قضا روزے ہیں، جنہیں میں اب رکھ رہی ہوں، چونکہ میں نے 21 روزے بغیر کسی شرعی عذر کے چھوڑے تھے ،تو اب مجھے یہ معلوم کرنا ہے کہ مجھے انکی قضا کیسی کرنی ہے؟ ہر روزے کے بدلے ایک روزہ رکھوں، یا ساٹھ روزے لگاتار رکھنے ہوں گے، جس کو رکھنامیرے لئے ممکن نہیں ہے۔براہ کرم وضاحت فرمائیں۔

جواب: اگر آپ نے روزے رکھے ہی نہیں ہیں، تو آپ پر ان روزوں کی صرف قضاء لازم ہے، کفارہ (ساٹھ روزے رکھنا) لازم نہیں ہے۔
لہذا ان 21 روزوں کے بدلے جتنی جلدی ممکن ہو، 21 قضاء روزے رکھ لیں، اور اس پر توبہ و استغفار بھی کریں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الھدایہ: (240/1، ط: مکتبہ رحمانیہ)
وقضاء رمضان ان شاء فرقہ و ان شاء تابعہ، لاطلاق النص لکن المستحب المتابعۃ مسارعۃ الی اسقاط الواجب بقدر ماادرک۔

و فیہ ایضاً: (242/1، ط: مکتبہ رحمانیہ)
و من اصبح غیر ناویا للصوم فاکل لا کفارۃ علیہ۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 287
imtihan / exam ki waja se / say ramzan ul mubarak ke / kay roze na rakhe ho / hon to in ke qaza lazim he

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Sawm (Fasting)

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.