عنوان: رینٹ Rennet سے بنی ھوئی اشیاء کے کھانے کا حکم   (100891-No)

سوال: محترم مفتی صاحب ! ھم لوگ جرمنی میں رہتے ہیں، یہاں ھم کھانے کے لیے جو Cheese ( پنیر) استعمال کرتے ہیں، اس کے Ingredients میں Rennet شامل ہوتا ہے، کیا اس Cheese کا استعمال جائز ہے یا نہیں؟

جواب:
رینٹ Rennet کا تعارف:
رینٹ Rennet ایک Dairy product ہے، جو تازہ دم بچھڑے کے معدے میں موجود دودھ سے بنایا جاتا ہے، اس کو بنانے کا طریقہ یہ ہوتا ہے کہ جب گائے کا بچھڑا دودھ پی لیتا ہے تو اس کو ذبح کرکے اس کے معدے میں سے وہ دودھ نکال لیا جاتا ہے، اس معدے سے نکالے ہوئے دودھ کو انگریزی میں رینٹ Rennet اور عربی میں انفحہ کہتے ہیں، پرانے زمانے میں اس سے پنیر بنایا جاتا تھا، آج کل یہ پنیر کے علاوہ بہت سے مصنوعات میں استعمال ہونے لگا ہے۔

رینٹ کا شرعی حکم:
امام ابو حنیفہ کے نزدیک حلال جانور کے بچھڑے کے معدے سے جو دودھ یا رینٹ حاصل کیا جائے، وہ مطلقاً پاک اور حلال ہے، یعنی ایسا بچھڑا جو اپنی موت آپ مرا ہو یا ذبح کیا گیا ھو، نیز اس کو ذبح کرنے والے مسلمان اور کتابی ہوں یا غیرمسلم، بہرحال بچھڑے کے معدے سے نکالا گیا دودھ ناپاک اور حرام نہیں، چنانچہ انفحہ کے بارے میں امام صاحب کے مذکورہ راجح مسلک کی روشنی میں آج کل جن مصنوعات میں رینٹ استعمال ہو، ان کا استعمال شرعا جائز ہے، البتہ یہ واضح رہے کہ آجکل بعض اوقات رینٹ کو حاصل کرنے کے لئے جانور کے سالم معدے کو کرش Crush کر لیا جاتا ہے، ایسے رینٹ میں چونکہ گوشت کے اجزاء بھی شامل ہو جاتے ہیں، اس لئے ایسی صورت میں اس کے حلال ہونے کے لئے ضروری ہے کہ وہ حلال مذبوحہ جانور کے معدے سے ہی حاصل کیا گیا ہو، حرام اور غیر مذبوحہ جانور کے معدے سے حاصل کیا گیا رینٹ امام ابوحنیفہ کے قول کے مطابق بھی حلال نہیں ہوگا، لہذا غیر مسلم ممالک کی بنی ہوئی پنیر کے بارے میں اگر تحقیق سے معلوم ہو کہ اس میں موجود رینٹ کو نکالنے میں اس کے معدے کے اجزاء شامل نہیں ہیں، تو اس پنیر کو استعمال کرنا جائز اور حلال ہے، بصورت دیگر اس کا استعمال ناجائز اور حرام ہوگا۔

واضح رہے کہ Microbial Rennet سے بنی ہوئی Cheese (پنیر) کھانا حلال ہے۔

ماکولات و مشروبات میں مزید فتاوی

15 Sep 2019
اتوار 15 ستمبر - 15 محرّم 1441

Copyright © AlIkhalsonline 2019. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com