عنوان: غلاف کعبہ پر کسی شخص کا نام لکھنا(1058-No)

سوال: سنا ہے کہ غلاف کعبہ میں کسی شخص کا نام لکھنے سے اس بندے کا اللہ کے گھر میں بلاوا آجاتا ہے، کیا یہ حقیقت ہے؟

جواب: واضح رہے کہ مذکورہ عمل کا کسی حدیث سے ثبوت نہیں ملتا ہے، البتہ کسی کا اگر ذاتی تجربہ ایسا ہو اور اس سے فائدہ بھی پہنچتا ہو تو اس طرح کا عمل کر لینے میں کوئی حرج نہیں ہے، بشرطیکہ اس کو سنت یا واجب کا درجہ نہ دیا جائے اور اس کو لازم سمجھ کر اس کا اہتمام نہ کیا جائے۔

....................
دلائل:

تفسیر روح المعانی : (۲۱۳/۱۰،سورہ حج آیت :۲۷)
عن عبداللہ بن عباس قال ان ابراہیم علیہ السلام صعد ابا قبیس فوضع اصبعیہ فی اذنیہ ثم نادٰی یا ایھا الناس ان اللہ تعالیٰ کتب علیکم الحج فاجیبوا ربکم فاجابوہ بالتلبیۃ فی اصلاب الرجال وارحام النساء و اول من اجاب اھل الیمن فلیس حاج یحج من یومئذ الیٰ ان تقوم الساعۃ الا من اجاب یومئذ ابراہیم علیہ السلام

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 2131 Mar 20, 2019
Ghilaf Kaba Ka'aba per kisi shakhs ka naam likhnay ka hukum, Ruling on writing the name of a person on the covering of the Ka'bah

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Bida'At & Customs

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.