عنوان: شَاہ وَلِی نام رکھنا(12305-No)

سوال: مفتی صاحب! کیا شاہ ولی نام رکھنا درست ہے؟

جواب: لفظ "شَاہ" فارسی زبان کا لفظ ہے، جس کے معنی ہیں: مالک، بادشاہ۔
لفظ "وَلِیّ" (واؤ کے زبر، لام کی زیر اور یا مشدد) عربی زبان کا لفظ ہے، ولی کے معنی ہیں: محبت کرنے والا، دوست، مددگار۔ الوَلِیّ حضور اکرم ﷺ کا صفاتی نام بھی ہے، اس لیے صرف ولی نام رکھنا بھی درست ہے، اور اسی طرح اس کے شروع میں لفظ شاہ کا اضافہ کرکے مرکب نام رکھنا بھی درست ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الفقه الإسلامي و أدلته: (643/3، ط: دار الفکر)
"ويجوز التسمية بأكثر من اسم واحد، والاقتصار على اسم واحد أولى، لفعله صلّى الله عليه وسلم بأولاده"۔

مصباح اللغات: (ص: 967، ط: دار الاشاعت)
الوَلِیّ: محبت کرنے والا، دوست، مددگار۔

فرہنگ فارسی: (ص: 441، ط: دار الاشاعت)
شَاہ :مالک، بادشاہ۔

واللّٰه تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 301 Nov 09, 2023
shah wali naam rakhna

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Islamic Names

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.