عنوان: بیٹی کا نام "ھَنِین" رکھنا (13475-No)

سوال: میں نے اپنی بیٹی کا نام ھَنِین زہرا (ھاء پر زبر اور نون کی نیچے زیر) رکھا ہے، یہ نام رکھنا کیسا ہے؟

جواب: "ھَنِین" عربی زبان کا لفظ ہے، جس کے معنیٰ "رونے" کے ہیں، لہذا اس معنی کے اعتبار سے یہ نام نہیں رکھنا چاہیے، اس کے بجائے آپ کوئی اور نام مثلاً: "ھانیہ زہراء" رکھ لیں یا پھر ازواج مطہرات، صحابیات و تابعیات کے ناموں میں سے کسی نام کا انتخاب کرلیں۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القاموس الوحید: (ص: 1785)
ھن_ھنا، ھنیا: درد بھری آواز سے رونا، کسی کی یاد میں رونا، ماتم کرنا۔

الموسوعة الفقهية الكويتية: (11/311، ط: دار السلاسل)‏
الأصل جواز التسمية بأي اسم إلا ما ورد النهي عنه.‏

المعجم الوسيط: (998، ط: مكتبة الشروق الدولية)‏ هن_هنا، وهنينا: بكى بكاء مثل الحنين.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب ‏
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 246 Dec 26, 2023
beti ka naam hunain rakhna

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Islamic Names

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.