عنوان: کیا لڑکا اور لڑکی کی مدتِ رضاعت ایک ہے؟(101378-No)

سوال: سوال یہ ہے کہ میں نے لوگوں سے سنا ہے، وہ کہتے ہیں کہ لڑکی اور لڑکے کی مدتِ رضاعت میں فرق ہے، لڑکی کی مدتِ رضاعت ڈیڑھ سال ہے، اور لڑکے کی دو سال ہے، کیا یہ بات درست ہے؟

جواب: لڑکا اور اور لڑکی کی مدتِ رضاعت میں کوئی فرق نہیں ہے، دونوں کی مدتِ رضاعت پورے دو سال ہے، البتہ اگر کسی ضرورت اور مصلحت کے تحت دو سال سے پہلے بچہ کا دودھ چھڑانا پڑے، تو اس میں کوئی حرج نہیں ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی القرآن المجید:

وَ الۡوَالِدٰتُ یُرۡضِعۡنَ اَوۡلَادَہُنَّ حَوۡلَیۡنِ کَامِلَیۡنِ لِمَنۡ اَرَادَ اَنۡ یُّتِمَّ الرَّضَاعَۃَ ؕ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔فَاِنۡ اَرَادَا فِصَالًا عَنۡ تَرَاضٍ مِّنۡہُمَا وَ تَشَاوُرٍ فَلَا جُنَاحَ عَلَیۡہِمَا ؕ۔۔۔۔الآیۃ

(سورۃ البقرۃ، آیت: 233)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 365

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Fosterage

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com