عنوان: منی یا مذی اگر اونی کپڑوں پر لگ جائے تو اس کا حکم(14528-No)

سوال: مذی یا منی نکل کر اونی کپڑوں کو لگ جائے اور وہ دیکھائی نہ دے تو ان کپڑوں کا کیا حکم ہے؟

جواب: واضح رہے کہ منی اور مذی ناپاک ہیں، لہٰذا اگر یہ کپڑے پر لگ جائیں اور دکھائی نہ دیں، لیکن ان کا کپڑے پر لگنا یقین سے معلوم ہو تو ناپاکی کی جگہ کو دھونا اور پاک کرنا ضروری ہے، اگر ناپاکی کی جگہ معلوم نہ ہو تو بہتر یہ ہے کہ پورا کپڑا دھولیا جائے، ورنہ سوچ بچار كركے جس طرف ناپاکی كا غالب گمان ہو، اس طرف سے کپڑے کا ایک حصہ دھولیا جائے تو یہ بھی کافی ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القرآن الكريم: (المدثر، الآيات: 1 - 4)
يَاأَيُّهَا الْمُدَّثِّرُ o قُمْ فَأَنْذِرْ o وَرَبَّكَ فَكَبِّرْ o وَثِيَابَكَ فَطَهِّرْ o

الدر المختار: (327/1، ط: دار الفكر)
(وغسل طرف ثوب) أو بدن (أصابت نجاسة محلا منه ونسي) المحل (مطهر له وإن) وقع الغسل (بغير تحر) وهو المختار. وفي رد المحتار تحته: (قوله: ونسي المحل) بالبناء للمجهول، ثم إن النسيان يقتضي سبق العلم والظاهر أنه غير قيد وأنه لو علم أنه أصاب الثوب نجاسة وجهل محلها فالحكم كذلك ولذا عبر بعضهم بقوله " واشتبه محلها " تأمل.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 330 Jan 05, 2024
mani ya mazi agar owni kapron par lag jaye to is ka hukum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Purity & Impurity

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.