عنوان: بیوی کو مطمئن کرنے کے لیے اس کی شرم گاہ پر ہاتھ پھیرنا (15915-No)

سوال: بیوی کے ساتھ ہمبستری کرتے وقت بوس و کنار کے علاوہ اس کی شرم گاہ کو ہاتھ سے مسلا جائے جس کی وجہ سے عورت مطمئن ہو جائے اور اس کے بعد مرد اپنی اطمینانیت کے واسطہ اپنی شرمگاہ داخل کرے تو کیا یہ عمل کرنا درست ہے؟ یہ بتانا ضروری سمجھوں گا کہ شوہر کا انزال ہونا نارمل ہے۔ رہنمائی فرما دیں۔

جواب: جذبات ابھارنے یا بیوی کو مطمئن کرنے کے لیے شرم گاہ پر ہاتھ لگانے کی شرعاً گنجائش ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

البناية شرح الهداية (12/ 152)
وعن أبي يوسف - رَحِمَهُ اللَّهُ -: سألت أبا حنيفة عن الرجل يمس فرج امرأته وهي تمس فرجه ليتحرك عليهما فما ترى بذلك بأسا. قال: "إني لأرجو أن يعظم الأجر". كذا في " الذخيرة".

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 115 May 08, 2024
biwi ko mutmain karne ke liye us ki sharam gah per hath pherna

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Nikah

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.