عنوان: بیوی کو دھمکی دینے کے لیے "میں طلاق دے سکتا ہوں، اگر تم بدتمیزی کرتی رہیں" کے الفاظ کہنے کا حکم (15920-No)

سوال: اگر بیوی بدتمیزی کرتی ہو تو کیا شوہر اسے طلاق کی دھمکی دے سکتا ہے، (شوہر نے کہا کہ میں طلاق دے سکتا ہوں، اگر تم بدتمیزی کرتی رہیں) حالانکہ اس کا طلاق دینے کا کوئی ارادہ نہیں ہے۔

جواب: واضح رہے کہ طلاق کی دھمکی دینے کی صورت میں بعض اوقات زبان سے ایسے الفاظ نکل جاتے ہیں، جن سے بغیر نیت کی بھی طلاق واقع ہوجاتی ہے، اس لیے بیوی کو کسی کام سے روکنے کے لیے طلاق کی دھمکی دینے کے بجائے نرمی سے اس کو سمجھانا چاہیے، تاہم اگر طلاق کے الفاظ کی دھمکی دی جائے تو اس سے طلاق واقع نہیں ہوگی۔
پوچھی گئی صورت میں مذکورہ الفاظ (میں طلاق دے سکتا ہوں، اگر تم بد تمیزی کرتی رہیں) چونکہ دھمکی کے الفاظ ہیں، لہذا ان کی وجہ سے طلاق واقع نہیں ہوئی ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
الدلائل:

الفتاوى الهندية: (384/1، ط: دار الفكر)
في المحيط لو قال بالعربية أطلق لا يكون طلاقا إلا إذا غلب استعماله للحال فيكون طلاقا

واللّٰه تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 72 May 10, 2024
biwi ko dhamki dene ke liye"mein talaq de sakta ho hon,agar tum badtameezi karte hain? ke alfaz kehne ka hokum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Divorce

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.