عنوان: خنزیر سے جفتی کرائے ہوئے جانور کی قربانی(101725-No)

سوال: السلام علیکم، حضرت ! سوال یہ ہے کہ اگر سور اور بھینس کے کراس سے کوئی بھینس نکلتا ہے، تو کیا اس کا گوشت حلال ہو گا اور اس کی قربانی کی جا سکتی ہے؟

جواب: واضح ہو کہ جانوروں میں ماں کا اعتبار ہوتا ہے، ماں اگر حلال ہو، تو اس سے پیدا ہونے والا بچہ بھی حلال ہوگا، چاہے کسی بھی حرام جانور کی جفتی کرنے سے بچہ پیدا ہوا ہو، لہذا مذکورہ بھینس اور اس سے پیدا ہونے والے بچوں کی قربانی جائز ہے۔
البتہ قربانی کے لیے بہتر یہ ہے کہ ایسا جانور ذبح کیا جائے، جس میں کسی قسم کا شک و شبہ نہ ہو۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الھندیۃ: (297/5، ط: دار الفکر)

’’(أما جنسه) : فهو أن يكون من الأجناس الثلاثة: الغنم أو الإبل أو البقر،۔۔۔۔ولا يجوز في الأضاحي شيء من الوحشي فإن كان متولداً من الوحشي والإنسي، فالعبرة للأم، فإن كانت أهليةً تجوز وإلا فلا‘‘.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 797
khinzeer say jufti karaye hoy janwar ki qurbani , Sacrifice of an animal who copulated / intercoursed with a pig

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Qurbani & Aqeeqa

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.