عنوان: بیوی کی وفات کے بعد شوہر کے لیے اس کا چہرہ دیکھنا، اس کے جنازے کو کندھا دینا اور قبر میں اتارنے کا حکم(101929-No)

سوال: ھمارے علاقے میں مشھور ھے کہ بیوی کے مرنے کے بعد شوھر اسکا چھرہ نھیں دیکھ سکتا، اسکے جنازے کو کندھا نھیں دے سکتا، قبر میں نھیں اتار سکتا، یہ باتیں کس حد تک درست ھیں؟ کیا شریعت میں اسکا کوئی تصور ھے؟

جواب:
شوہر کا اپنی بیوی کی وفات کے بعد اس کا چہرہ دیکھنا جائز ہے، اس کے جنازے کو کاندھا بھی دے سکتا ہے، قبر میں اتارنے کے لیے عورت کے محرم رشتہ دار ناکافی ہوں، تو بجائے کسی غیر محرم کے، شوہر اپنی بیوی کی میت کو قبر میں بھی اتار سکتا ہے۔

لما فی حاشیۃ الطحطاوی علی مراقی الفلاح:
"ولایمنع من النظر الیھا فی الاصح".
( حاشیۃ الطحطاوی علی مراقی الفلاح، کتاب الصلاۃ، باب احکام الجنائز: ۵٧٢ ،ط دارالکتاب)

وفی العالمکیریۃ:
" ذوالرحم المحرم اولی بادخال المرأۃ من غیرہم کذا فی الجوہرۃ النیرۃ ،وکذا ذوالرحم غیر المحرم اولی من الاجنبی فان لم یکن فلا بأس للاجانب وضعہا کذا فی البحر الرائق".
(الفتاویٰ العالمکیریۃ: ۱/ ۱۶۶، الباب الحادی و العشرون فی الجنائز، الفصل السادس فی القبر والدفن)

میت و جنازہ میں مزید فتاوی

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Funeral & Jinaza

23 Jan 2020
جمعرات 23 جنوری - 27 جمادى الاول 1441

Copyright © AlIkhalsonline 2019. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com