عنوان: کیا لے پالک بچی نامحرم ہوتی ہے؟ (2772-No)

سوال: کیا جو بچی چھوٹی عمر سے لے کے پالی جائے وہ بالغ ہونے کے بعد نا محرم ہو جائیگی ؟

جواب: واضح رہے کہ وہ بچی جو کسی اور سے لے کر پالی گئی ہو، اور پالنے والے نے اس بچی کو مدت رضاعت (دودھ پلانے کے زمانہ) میں اپنی بیوی یا کسی محرم خاتون کا دودھ بھی نہ پلایا ہو، تو وہ بچی پالنے والے کے لیے تمام شرعی احکام ( میراث، پردہ اور حقوق وغیرہ)میں نامحرم ہی رہے گی۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القرآن الکریم: (الأحزاب، الآیۃ: 4)
وَمَا جَعَلَ أَدْعِيَاءَكُمْ أَبْنَاءَكُمْ ذَلِكُمْ قَوْلُكُمْ بِأَفْوَاهِكُمْ وَاللَّهُ يَقُولُ الْحَقَّ وَهُوَ يَهْدِي السَّبِيلَo

الدر المختار: (کتاب النکاح، فصل فی المحرمات، 28/3، ط: سعید)
أسباب التحريم أنواع: قرابة، مصاهرة، رضاع، جمع، ملك، شرك، إدخال أمة على حرة، فهي سبعة۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 758 Dec 04, 2019
kia le palak bachi na mehram hoti he / hey?, Is a foster child (female) a non-mahram?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Nikah

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.