عنوان: کیا منت کے روزوں کے بدلے فدیہ دے سکتے ہیں؟(3121-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! اگر کوئی شخص منت مانے کہ اگر فلاں کام ہوجائے، تو دس روزے رکھوں گا، پھر وہ کام ہو جائے، تو اگر گرمی کی وجہ سے روزے نہ رکھ سکے، تو اس کے بدلے فدیہ دے سکتا ہے یا نہیں؟

جواب: واضح رہے کہ اگر گرمی کی وجہ سے روزے نہیں رکھ سکتا، تو سردیوں میں ان روزوں کو رکھ لے، اس عارضی عذر کی بنا پر روزے کے بدلے فدیہ ادا کرنا صحیح نہیں ہے، البتہ اگر کوئی ایسا عذر ہو، جس کی وجہ سے آئندہ بھی روزہ نہ رکھ سکتا ہو، تو ہر روزے کے بدلے کسی محتاج کو صدقہ فطر کی مقدار غلہ یا اس کی قیمت دے دے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الفتاوی الھندیہ: (الباب السادس فی النذر، 135/1)
واذا نذربصوم کل خمیس یاتی علیہ فافطر خمیسا واحدا فعلیہ قضاء ہ، کذافی المحیط ولو اخرا لقضاء حتی صار شیخاًفانیاً و کان النذر بصیام الأ بد فعجز لذلک او باشتغا لہ بالمعیشۃ لکن صنا عتہ شاقۃ لہ ان یفطر ویطعم لکل یوم مسکیناً علی ما تقدم وان لم یقدر علی ذلک لعسرتہ یستغفراﷲ انہ ھو الغفور الرحیم ولو لم یقدر لشدۃ الزمان کالحرلہ ان یفطر وینتظر الشتاء فیقضی، کذا فی فتح القدیر

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 1194
Kia mannat kay rozon kay badlay fidyah day saktay hain, ke, badle, fadya, fadyah, de, sakte, hein, can one give fidyah in place of missed vowed fasts?, giving fidyah for missed fasts, kaffara and fidya

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Ruling of Oath & Vows

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.