عنوان: لڑکی کی قرآن سے شادی کرنا(3424-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! میں نے ایک جگہ دیکھا کہ وہاں لوگ لڑکی کی شادی قرآن مجید سے کرتے ہیں کہ اس لڑکی کا قرآن سے نکاح ہوگیا، کیا ایسا کرنا گناہ ہے؟ اور کیا بلاعذر لڑکی کی شادی نہ کرنا جائز ہے؟

جواب: واضح رہے کہ شریعت میں قرآن کے ساتھ نکاح کرنے کی کوئی حقیقت نہیں ہے، یہ ایک فضول رسم ہے، اور بلا عذر لڑکی کی شادی نہ کرنا گناہ کے ساتھ ساتھ اولاد کو غلط راستے پر ڈالنا بھی ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

مشکوۃ المصابیح: (باب الولي في النکاح، ص: 271)
عن عمربن الخطابؓ، وأنس بن مالکؓ عن رسول اللّٰہﷺ قال في التوراۃ مکتوب من بلغت ابنتہ اثنتي عشرۃ سنۃ ولم یزوجھا فأصابت إثما فإثم ذلک علیہ رواہ البیھقی في شعب الإیمان۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 2193 Jan 23, 2020
Larki ki Quran say shaadi karna, ladki, ke, Koran, se, shadi, Marrying a girl to the Quran

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Nikah

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.