عنوان: کسی کو قتل کی دھمکی دینا (3673-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب ! اگر کوئی ماں اپنی بیٹی کو غصہ میں یہ کہہ دے کہ اگر آج میں نے تجھے قتل نہ کیا تو میں اپنے باپ سے نہیں، تو ایسا جملہ کہنے والی ماں کے بارے میں کیا حکم ہے؟

جواب: سوال میں ذکر کردہ الفاظ اگر واقعی اسی طرح کہے گئے ہیں، تو ان الفاظ سے قسم واقع نہیں ہوتی، یہ محض دھمکی ہے، جو کہ اپنی جگہ پر بہت سنگین اور قابل افسوس بات ہے کہ کوئی خاتون اپنی اولاد کو جان سے مارنے کی کس طرح دھمکی دے سکتی ہے؟

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الدر المختار: (702/3، ط: دار الفکر)
(اليمين) لغة القوة. وشرعا (عبارة عن عقد قوي به عزم الحالف على الفعل أو الترك) فدخل التعليق فإنه يمين شرعا إلا في خمس مذكورة في الأشباه، فلو حلف لا يحلف حنث بطلاق وعتاق. وشرطها الإسلام والتكليف وإمكان البر. وحكمها البر أو الكفارة. وركنها اللفظ المستعمل فيها

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 595
Kisi, ko, qatal, ki, dhamki, dhamke, daina, dena, Threatening to kill someone, threat, killing, death

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Ruling of Oath & Vows

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.