عنوان: دودھ پلانے کی مدت(104013-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب ! بچہ یا بچی کو عورت کس عمر تک اپنا دودھ پلا سکتی ہے؟

جواب: راجح قول کے مطابق دودھ پلانے کی مدت دو سال ہے، اس کے بعد دودھ نہیں پلانا چاہیے، لیکن اگر بچہ کمزور ہو اور دودھ چھوڑنے سے بیمار ہونے کا اندیشہ ہو تو ڈھائی سال تک پلانے کی گنجائش ہے، البتہ ڈھائی سال کے بعد بچہ کو ماں کا دودھ پلانا بالکل ناجائز و حرام ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

قال اللہ تعالیٰ:
وَالْوَالِدَاتُ يُرْضِعْنَ اَوْلاَدَهُنَّ حَوْلَيْنِ كَامِلَيْنِ لِمَنْ اَرَادَ اَن يُّتِمَّ الرَّضَاعَةَ۔ الآیۃ (البقرة: ۲۳۳)

کما فی الشامیۃ:
الرضاع . . . شرعا مص من ثدی آدمیۃ فی وقت مخصوص ہو حولان و نصف عندہ و حولان فقط عندھما وہو الاصح وبہ یفتی ۔
(ج4، ص393)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 364
dodh / milk pilanay ki muddat

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Fosterage

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com