عنوان: تراویح کی قضا (104204-No)

سوال: السلام علیکم، مفتی صاحب! اگر کسی نے تراویح کی نماز نہیں پڑھی اور وقت ختم ہو گیا، تو اب کیا حکم ہے؟

جواب: تراویح کا وقت عشاء کی نماز کے بعد سے لے کر طلوعِ فجر تک ہے، لہذا اگر کوئی شخص وقت کے اندر تراویح نہ پڑھ سکا، تو اس پر تراویح کی قضا لازم نہیں ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کذا فی الدر المختار:

ولا تقضی إذا فاتت (أصلاً) ولا وحدہ فی الأصح، فإن قضاہا کان نفلا مستحبا، ولیس بتراویح کسنۃ مغرب وعشاء۔

(الدرالمختار، کتابالصلاۃ، باب الوتر والنوافل، مبحث فيصلاۃ التراویح، زکریا ۲/ ۴۹۴-۴۹۵)

کذا فی التاتارخانیہ:

إذا فات التراویح عن وقتہا ہل یقضی؟ -إلی- وقال بعضہم: لا یقضي أصلا، وہو أصح۔

(الفتاوی التاتارخانیۃ، کتاب الصلاۃ، الفصل الثالث عشر في التراویح، زکریا ۲/ ۳۳۵)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 472
taraweeh ki qaza

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Taraweeh Prayers

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.