عنوان: حضور صلی اللہ علیہ وسلم کی قسم کھانا(426-No)

سوال: ایک دفعہ میں آفس سے گھر آیا، تو کافی غصہ میں تھا، تھوڑی دیر بعد ہم کھانا کھانے بیٹھ گئے، کسی بات پر میر ی بیوی سے لڑائی شروع ہوگئی، اور کافی بحث کے بعد میں نے غصے میں کہہ دیا تھا کہ "حضور پاک کی قسم! میں آئندہ گوشت نہیں کھاؤں گا"، پھر گھر والوں نے کافی منایا، تو میں نے گوشت کھا لیا، تو کیا میرے ذمہ قسم کا کفارہ واجب ہے؟

جواب: اللہ تعالیٰ کے علاوہ کسی اور کی قسم کھانا جائز نہیں ہے، اور نہ ہی ایسی قسم کھانے سے قسم منعقد ہوتی ہے، لہذا اس جیسی قسم توڑنے سے کفارہ واجب نہیں ہوگا، البتہ غیر اللہ کی قسم کھانے سے توبہ کرنا لازم ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الھندیۃ: (53/2، ط: دار الفکر)
مَنْ حَلَفَ بِغَيْرِ اللَّهِ لَمْ يَكُنْ حَالِفًا كَالنَّبِيِّ - عَلَيْهِ السَّلَامُ -، وَالْكَعْبَةِ كَذَا فِي الْهِدَايَةِ.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 629
Huzoor Sallallahu Alaihi Wasallam Ki Qasam Khana, Huzur, saw, qasm khana, Huzur e pak ki qasam khana, nabi ki qasam khana, kasam khana, Gairullah ki qasam, Ghairullah ki qasam, Ruling on swearing by the Prophet peace and blessings of Allaah be upon him, Whoever swears by anything other than Allaah is guilty of kufr or shirk, Swearing By Other Than Allah, A form of Shirk, Prohibition of Swearing in the name of anything besides Allah

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Ruling of Oath & Vows

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.