عنوان: معتکف کا جماعت کی خاطر دوسری مسجد میں جانا(105036-No)

سوال: اگر کسی معتکف کی اپنی مسجد میں پیشاب پاخانے کے لیے جانے کی وجہ سے نماز جماعت سے رہ جائے، تو کیا معتکف جماعت سے نماز پڑھنے کے لیے کسی دوسری مسجد جا سکتا ہے یا نہیں؟

جواب: اگر معتکف کی اپنی مسجد میں کسی وجہ سے جماعت کی نماز رہ گئی، مثلاً: پیشاب یا پاخانے کے لیے گیا، جب واپس آیا تو معلوم ہوا کہ جماعت ختم ہوگئی ہے، تو اب باہر دوسری مسجد میں جماعت کی خاطر جانا جائز نہیں ہے، اس سے اعتکاف فاسد ہوجائے گا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کذا فی الشامیۃ:

ویجوز حمل الرخصۃ علی ما لو خرج لوجہ مباح کحاجۃ الانسان او الجمعۃ و عاد مریضا او صلی علی جنازۃ من غیر ان یخروج لذلک قصدا وذلک جائز
وبہ علم انہ بعد الخروج لوجہ مباح انما یضر المکث لو فی غیر مسجد لغیر عبادۃ۔۔۔۔۔۔۔
تتمۃ: لم یذکر جواز خروجہ لجماعۃ، وقدمنا عن النھر والفتح ما یفیدہ ، ویاتی فی کلامہ ما یفیدہ ایضاً۔۔۔۔۔۔الخ

(رد المحتار 446،447/2، ط: سعید)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 266
mutakif ka jamaat ki khaatir doosri masjid mai jaana

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Aitikaf

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com