عنوان: طلاق اور وفات کی صورت میں عدت میں فرق کیوں ہے؟(105130-No)

سوال: مفتی صاحب ! عدتِ وفات اور عدتِ طلاق میں فرق کیوں ہے؟

جواب: مطلقہ اور بیوہ کی عدت کا حکم اور دونوں کا فرق قرآن کریم میں واضح طور پر موجود ہے٬ ایک مسلمان کیلئے اتنا ہی کافی ہے کہ اللہ رب العزت کا حکم ہے٬ باقی اس کی حکمتوں کے پیچھے پڑنا مطلوب نہیں ہے٬ کیونکہ احکم الحاکمین کی تمام حکمتوں کا احاطہ کرنا ممکن ہی نہیں٬ تاہم محض سمجھنے کی خاطر (نہ کہ عمل کرنے یا نہ کرنے کی غرض سے) حکمت معلوم کرنے میں کوئی حرج بھی نہیں ہے٬ چنانچہ عدت کے مسئلے کے اندر اصل علت تو اللہ رب العزت کا حکم ہے٬ باقی اس میں مصلحت یہ ہے کہ تاکہ اچھی طرح معلوم ہوجائے کہ اسے حمل ٹہرا ہے یا نہیں٬ اور شوہر کی وفات کی صورت میں غم اور سوگ کا بھی عنصر ہے٬ اس لئے اس کی عدت نسبتاً زیادہ مقرر کی گئی ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

لما فی القرآن الکریم:
" والذین یتوفون منکم و یذرون ازواجا یتربصن بانفسھن أربعۃ أشھر و عشرا "
(البقرۃ :۲۳۴)

وفیہ ایضا:
" والمطلقٰت یتربصن بانفسھن ثلثہ قروء "
وفی التفسیر لابن الکثیر:

"وقد ذکر سعید بن المسیب وأبو العالیۃ وغیرہما: أن الحکمۃ في جعل عدۃ الوفاۃ أربعۃ أشہر وعشرًا لاحتمال اشتغال الرحم علی حمل، فإذا انتظر بہ ہٰذہ المدۃ، ظہر إن کان موجودًا کما في جاء في حدیث ابن مسعود الذي في صحیحین وغیرہا: إن خلق أحدہم یجمع في بطن أمہ أربعین یومًا نطفۃً، ثم یکون علقۃ مثل ذٰلک، ثم یکون مضغۃ مثل ذٰلک، ثم یبعث إلیہ الملک فینفخ فیہ الروح، فہٰذہ ثلاث أربعینات بأربعۃ أشہر، والاحتیاط بعشر بعدہا لما قد ینقص بعض الشہور،
قال سعید بن أبي عروبۃ عن قتادۃ: سألت سعید بن المسیب ما بال العشر؟ قال: فیہ ینفخ الروح"
( البقرۃ ۲۳۴ دار السلام ریاض)

وفی الددر المختار مع الشامي:
"غیر الآیسۃ والحامل فإن عدتہما بالأشہر والوضع الحیض للموت أي موت الواطي وغیرہ کفرقۃ أو متارکۃ؛ لأن عدۃ ہٰؤلاء لتعرف براء ۃ الرحم وہو بالحیض"
(باب العدۃ / مطلب في النکاح الفاسد والباطل ۵؍۱۹۹ زکریا)

و اللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 692
talaaq or wafaat ki soorat mai eddat mai farq kiun hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Iddat(Period of Waiting)

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © AlIkhalsonline 2021.