عنوان: قرض ادا کرنے کا وظیفہ(105181-No)

سوال: حضرت ! قرض کی وجہ سے بہت پریشان ہوں، براہ کرم قرض کی ادائیگی کے لیے کوئی وظیفہ بتا دیں۔

جواب: قرض کی ادائیگی کے لیے کامل یقین کے ساتھ اس دعا کا اہتمام فرمائیں، ان شاء اللہ قرض اترنے میں آسانی ہو جائے گی۔

ترمذی شریف کی حدیث میں ہے :

حضرت علی رضی الله عنہ سے روایت ہے کہ ایک مکاتب غلام نے ان کے پاس آ کر کہا کہ میں اپنی مکاتبت کی رقم ادا نہیں کر پا رہا ہوں، آپ میری کچھ مدد فرما دیجئیے تو انہوں نے کہا: کیا میں تم کو کچھ ایسے کلمات نہ سکھا دوں، جو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ہمیں سکھائے تھے؟ اگر تیرے اوپر «صیر» پہاڑ کے برابر بھی قرض ہو تو تیری جانب سے اللہ اسے ادا فرما دے گا، حضرت علی نے کہا: کہو: « اللهم اكفني بحلالك عن حرامك وأغنني بفضلك عمن سواك» ”اے اللہ حرام سے بچاتے ہوئے اپنے حلال کے ذریعے میری کفایت فرما ، اور آپ اپنے فضل سے دوسروں سے مجھے بے نیاز فرمادے۔


۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کذا فی الترمذی:
عن عبد الرحمن بن إسحاق، عن سيار، عن أبي وائل، عن علي، أن مكاتبا جاءه فقال: إني قد عجزت عن مكاتبتي فأعني، قال: ألا أعلمك كلمات علمنيهن رسول الله صلى الله عليه وسلم لو كان عليك مثل جبل صير دينا أداه الله عنك، قال: قل: اللهم اكفني بحلالك عن حرامك، وأغنني بفضلك عمن سواك.

(ج5، ص381، رقم الحدیث3563، ط: دارالحدیث القاہرہ)


واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

(مزید سوالات و جوابات کیلئے ملاحظہ فرمائیں)
http://AlikhlasOnline.com

اذکار ودعائیں میں مزید فتاوی

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Azkaar & Supplications

20 Sep 2020
01 Safar 1442

Copyright © AlIkhalsonline 2020. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com