عنوان: تایا زاد بہن کے ساتھ بھائی بن کر رہنے کی قسم کھانا(5771-No)

سوال: چند سال پہلے کی بات ہے کہ میں نے اپنی تایا زاد بہن کے سامنے قسم کھائی تھی کہ میں آپ کے ساتھ بھائی بن کر رہوں گا، اور بھائیوں والا رویہ اختیار کروں گا، اب میرے والدین تایا زاد بہن کے ساتھ میری شادی کروانا چاہتے ہیں، تو کیا شادی کرنے سے میرے ذمہ قسم کا کفارہ واجب ہوگا، اور کیا میں گناہگار تو نہیں ہوں گا؟

جواب: صورتِ مسئولہ میں آپ کی اپنی تایا زاد بہن کے ساتھ شادی کرنے کی وجہ سے قسم ٹوٹ جائے گی، اور آپ کے ذمہ قسم کا کفارہ ادا کرنا واجب ہوگا، اس صورت میں آپ گناہگار نہیں ہوں گے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

سنن ابی داؤد: (229/3، ط: المکتبة العصریة)

عن عبد الرحمن بن سمرة، قال: قال لي النبي صلى الله عليه وسلم: «يا عبد الرحمن بن سمرة، إذا حلفت على يمين فرأيت غيرها خيرا منها، فأت الذي هو خير، وكفر يمينك»۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 968
taya zaad behen k saath bhai ban kar rehne / rehney ki qasam khana

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Ruling of Oath & Vows

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.