عنوان: ذبح شدہ جانور کے پیٹ سے نکلنے والے بچہ کا حکم(5774-No)

سوال: ہم لوگ قصائی ہیں، بقرہ عید پر لوگوں کی گائے وغیرہ ذبح کرتے ہیں ،بعض اوقات ذبح کرنے کے بعد جب ہم پیٹ چاک کرتے ہیں، تو اس سے بچہ نکلتا ہے، سوال یہ کہ اس بچہ کے بارے میں شریعت کا کیا حکم ہے؟

جواب: واضح رہے کہ قربانی کے موقع پر جانور ذبح کرنے کے بعد اس کے پیٹ سے زندہ بچہ نکلے، تو بچہ کو ذبح کرکے کھانا حلال ہے، اور اگر بچہ مردہ نکلے، تو اس میں اختلاف ہے، امام ابو حنیفہ کے نزدیک حلال نہیں ہے، جب کہ امام ابو یوسف اور امام محمد فرماتے ہیں کہ حلال ہے، تاہم احتیاط اس میں ہے کہ نہ کھایا جائے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الدر المختار مع رد المحتار: (322/6، ط: دار الفکر)
ولدت الأضحية ولدا قبل الذبح يذبح الولد معها.
(قوله قبل الذبح) فإن خرج من بطنها حيا فالعامة أنه يفعل به ما يفعل بالأم۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 1563 Nov 19, 2020
zibah shuda janwar ke / key pet se nikalne wale bachay ka hukum / hukm, The order of a child coming out of the belly of a slaughtered animal

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Qurbani & Aqeeqa

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.