عنوان: مہر کی ادائیگی سے پہلے بیوی کا انتقال ہوجائے، تو مہر کی رقم کس کو دی جائے گی؟(5820-No)

سوال: مفتی صاحب ! مہر ادا نہیں کیا تھا کہ بیوی کا انتقال ہوگیا، اب شریعت کا حکم کیا ہے؟

جواب: مہر جو شوہر کے ذمہ واجب الاداء ہے، وہ اب مرحومہ بیوی کا ترکہ بن گیا ہے، یعنی مہر بھی بیوی کے دیگر متروکہ مال کی طرح بیوی کے شرعی ورثاء کے درمیان حسبِ حصصِ شرعیہ تقسیم ہوگا، البتہ یہاں یہ بات قابلِ ذکر رہے کہ چوں کہ شوہر بھی بیوی کا وارث بنتا ہے، لہذا اگر بیوی نے کوئی اولاد نہیں چھوڑی ہے تو پورے ترکے کا آدھا شوہر کو ملے گا، اور اگر کوئی اولاد چھوڑی ہے تو ایک چوتھائی (1/4) ترکہ شوہر کو ملے گا اور مابقیہ دیگر ورثاء کے درمیان تقسیم ہوگا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

القرآن الکریم: (النساء، الایة: 12)
وَلَكُمْ نِصْفُ مَا تَرَكَ أَزْوَاجُكُمْ إِن لَّمْ يَكُن لَّهُنَّ وَلَدٌ فَإِن كَانَ لَهُنَّ وَلَدٌ فَلَكُمُ الرُّبُعُ مِمَّا تَرَكْنَ مِن بَعْدِ وَصِيَّةٍ يُوصِينَ بِهَا أَوْ دَيْنٍ....الخ

السنن الکبریٰ للبیهقي: (کتاب الصداق، رقم الحدیث: 14850، 51/11، ط: دار الفکر)
"محمد بن عبد الرحمن بن ثوبان عن النبي صلی اﷲ علیه وسلم مرسلاً: من کشف خمار امرأة ونظر إلیها، فقد وجب الصداق دخل بها، أولم یدخل".

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 1831 Nov 23, 2020
meher ki adaigi / adayege se / sey pehley bivi / biwi ka inteqal / intiqaal hojai / hojaye, to meher ki raqam kis ko di jai gi?, If the wife dies before the payment of the meher / dowry, then to whom will the meher / dowry amount be given?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Nikah

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.