عنوان: سسر کا بہو کے ساتھ زنا کرنے کا شرعی حکم(6542-No)

سوال: اگر سسر بہو کے ساتھ غلط فعل کرے، تو شریعت میں اس کا کیا حکم ہے؟

جواب: اگر سسر نے اپنی بہو کے ساتھ زنا کرلیا ہے، تو اس فعل سے بہو اس کے بیٹے پر ہمیشہ کے لیے حرام ہوجائے گی۔
واضح رہے کہ یہ جواب اس صورت میں ہے، جبکہ آپ کی مراد غلط فعل سے زنا ہو ، اگر غلط فعل سے مراد کچھ اور ہے، تو واقعے کی مکمل تفصیل لکھ کر بھیجیں، تاکہ اس کے مطابق حکم بتایا جائے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الدر المختار مع رد المحتار: (33/3، ط: دار الفکر)
( و ) حرم أيضا بالصهرية ( أصل مزنيته ) أراد بالزنى الوطء الحرام (و) أصل ( ممسوسته بشهوة )۔
قوله :( وحرم أيضا بالصهرية أصل مزيته ) :قال في البحر: أراد بحرمة المصاهرة الحرمات الأربع حرمة المرأة على أصول الزاني وفروعه نسبا ورضاعا۔

الھندیة: (274/1، ط: دار الفکر)
فمن زنى بامرأة حرمت عليه أمها وإن علت وابنتها وإن سفلت، وكذا تحرم المزني بها على آباء الزاني وأجداده وإن علوا وأبنائه وإن سفلوا، كذا في فتح القدير۔

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 2085 Jan 22, 2021
susar ka baho kay sath zina karne ka shar'ee hukum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Nikah

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.