عنوان: ذبح کے بعد رگوں میں باقی رہنے والے اور گوشت پر لگے خون کا حکم(6735-No)

سوال: جانور کو ذبح کرنے کے بعد جو خون رگوں میں باقی رہ جاتا ہے یا گوشت پر لگا ہوتا ہے، اس خون کا حکم کیا ہے، آیا یہ نجس (ناپاک) ہے یا نہیں؟

جواب: جانور کو ذبح کرنے کے بعد جو خون رگوں میں باقی رہ جاتا ہے یا گوشت پر لگا ہوتا ہے، وہ بہنے والے خون (دم مسفوح) میں داخل نہیں ہے، لہذا وہ نجس (ناپاک) نہیں ہے، البتہ بہتر یہ ہے کہ اس سے بھی احتراز کیا جائے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الدر المختار: (319/1، ط: دار الفکر)
(ودم) مسفوح من سائر الحيوانات إلا دم شهيد ما دام عليه وما بقي في لحم مهزول وعروق وكبد وطحال وقلب وما لم يسل

الھندیۃ: (46/1، ط: دار الفکر)
وما يبقى من الدم في عروق الذكاة بعد الذبح لا يفسد الثوب وإن فحش. كذا في فتاوى قاضي خان وكذا الدم الذي يبقى في اللحم؛ لأنه ليس بمسفوح. هكذا في محيط السرخسي.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 1429 Feb 11, 2021
zibah kay baad ragoo mai baaqi rehne walay or ghosht par lagay khoon ka hukum, Ruling on the blood remaining in the veins and on the meat after slaughter

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Qurbani & Aqeeqa

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.