عنوان: رات کو روزہ کی نیت کرکے سویا اور ظہر میں آنکھ کھلی، تو روزہ کا کیا حکم ہے؟(6906-No)

سوال: مفتی صاحب ! کل کی بات ہے کہ میں دکان سے 2 بجے تھکا ہوا آیا اور میں نے رات ہی سے نیت کرلی تھی کہ اگلے دن میں رمضان کا روزہ رکھوں گا، لیکن تھکاوٹ کی وجہ سے اگلے دن سحری کے بجائے ظہر کے وقت آنکھ کھلی، سوال یہ ہے کہ کیا میرا روزہ ہوا یا نہیں؟

جواب: اگر کوئی شخص رات سے اگلے دن رمضان کا روزہ رکھنے کی نیت کرکے سوئے اور اگلے دن ظہر کے وقت اس کی آنکھ کھلے، تو چونکہ اس نے رات کو روزہ کی نیت کی تھی، لہذا اس کا روزہ درست ہوجائے گا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

الھندیۃ: (195/1، ط: دار الفکر)
ولو قال نويت أن أصوم غدا إن شاء الله - تعالى - صحت نيته هو الصحيح كذا في الظهيرية.

الفقہ الاسلامی و ادلتہ: (1670/3، ط: دار الفکر)
متى خطر بقلبه في الليل أن غداً من رمضان وأنه صائم فيه، فقد نوى.

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص،کراچی

Print Full Screen Views: 1053 Feb 24, 2021
rat ko roza ki niyyat kar kar soya or zohor mai aankh khuli to roza ka kia hukum hai?, I slept with the intention of fasting at night and opened my eyes at noon, so what is the ruling on fasting?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Sawm (Fasting)

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2024.