عنوان: کیا رشتہ دار کے جنازہ میں شرکت کے لئے معتکف مسجد سے باہر نکل سکتا ہے؟(106937-No)

سوال: اگر کوئی شخص اعتکاف میں بیٹھا ہوا ہو اور اس کے کسی رشتہ دار کا انتقال ہوجائے، تو کیا وہ رشتہ دار کے جنازہ میں شرکت کے لئے مسجد سے باہر جاسکتا ہے، اس سے اس کا اعتکاف تو نہیں ٹوٹے گا؟

جواب: واضح رہے کہ رشتہ دار کے جنازہ میں شرکت کے لئے بھی معتکف کا مسجد سے باہر نکلنا جائز نہیں ہے، اگر وہ مسجد سے باہر نکلے گا، تو اس کا اعتکاف ٹوٹ جائے گا، اور اس پر روزہ رکھنے کے ساتھ ایک دن رات کے اعتکاف کی قضا لازم ہوگی، البتہ جنازہ میں شرکت کے لئے معتکف اعتکاف توڑنے کی وجہ سے گناہ گار نہیں ہوگا۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کما فی الشامیۃ:

وعلى هذا يفسد لو لإعادة مريض أو شهود جنازة وإن تعينت عليه إلا أنه لا يأثم كما في المرض

(ج: 2، ص: 447، ط: دار الفکر)

وفی الھندیۃ:

ولو خرج لجنازة يفسد اعتكافه۔۔الخ

(ج: 1، ص: 212، ط: دار الفکر)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 575
kia rishtay daar kay janazay mai shirkat kay liye mootakif masjid say bahir nikal sakta hai?

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Aitikaf

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © AlIkhalsonline 2021.