عنوان: تراویح کی ابتدئی دس رکعات کو طویل کرنا اور بعد کی رکعات کو مختصر کرنے کا حکم (107121-No)

سوال: السلام علیکم، ایک حافظ صاحب تراویح میں ختم قرآن اس طرح کر رہا ہو کہ پہلی دس یا بارہ رکعت میں اپنے پارے پڑھتا ہو اور باقی کی رکعتیں مختصر پڑھاتا ہو، تو ایسا کرنا جائز ہے یا نا جائز؟

جواب: بہتر یہ ہے کہ تراویح کی تمام رکعات میں قرآن کریم برابر پڑھاجائے ،البتہ کچھ رکعات میں زیادہ اورکچھ میں کم پڑھنے میں بھی قباحت نہیں ہے ، بشرطیکہ نمازیوں پر اس سے بوجھ نہ پڑتا ہو۔

دلائل:

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔


لمافی بدائع الصنائع:

وأما في زماننا فالأفضل أن يقرأ الإمام على حسب حال القوم من الرغبة والكسل فيقرأ قدر ما لا يوجب تنفير القوم عن الجماعة؛ لأن تكثير الجماعة أفضل من تطويل القراءة، والأفضل تعديل القراءة في الترويحات كلها، وإن لم يعدل فلا بأس به۔

(ج:1، ص:۲۸۹، ط:دارالکتب العلمیۃ)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Full Screen Views: 243
taraweeh ki ibtidai das rakat ko taweel karna or baad ki rakat ko mukhtasar karne ka hukum

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Taraweeh Prayers

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.