عنوان: خواتین کے مخصوص ایام کے روزوں کی قضاء (107140-No)

سوال: مفتی صاحب ! جن خواتین کے روزے مخصوص ایام کی وجہ سے قضاء ہو جاتے ہیں، ان قضاء روزوں کے بارے میں کیا حکم ہے؟ حدیث کی روشنی میں جواب عنایت فرمائیں۔

جواب: واضح رہے کہ خواتین کے لیے مخصوص ایام میں روزہ رکھنا جائز نہیں ہے، اور ان روزوں کی بعد قضاء کرنا لازم ہے، جیسا کہ ترمذی شریف کی روایت میں حضرت عائشہ صدیقہ رضی اﷲ عنہا فرماتی ہیں کہ حضور نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ہمیں حالتِ حیض سے پاک ہونے پر قضاء روزے رکھنے کا حکم فرماتے تھے، اور (اس حالت میں چھوٹی ہوئی) نمازوں کو قضاء کرنے کا حکم نہیں فرماتے تھے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کذا فی الجامع الترمذی:

عَنْ عَائِشَةَ، قَالَتْ:‏‏‏‏ كُنَّا نَحِيضُ عَلَى عَهْدِ رَسُولِ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ ثُمَّ نَطْهُرُ فَيَأْمُرُنَا بِقَضَاءِ الصِّيَامِ وَلَا يَأْمُرُنَا بِقَضَاءِ الصَّلَاةِ.

(الجامع الترمذی، ابواب الصوم، باب ما جاء فی قضاء الحائض الصيام دون الصلاة، رقم الحدیث: 787، دارالحدیث القاہرۃ)

کذا فی الھندیۃ:

(منھا) … ان یسقط عن الحائض والنفساء الصلاۃ فلاتقضی ھکذا فی الکفایۃ … (ومنھا) ان یحرم علیھما الصوم فتقضیانہ ھکذا فی الکفایۃ۔

(کتاب الحیض، ج1، ص38، رشیدیہ)

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی

Print Full Screen Views: 339
khawateeen kay makhsoos ayyam kay rozon ki qazaa

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Women's Issues

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com

Copyright © Al-Ikhalsonline 2022.