عنوان: میت تابوت سمیت دفن کرنا(107154-No)

سوال: مفتی صاحب ! میت کو تابوت میں رکھ کر دفن کرنا کیسا ہے؟

جواب: مسلمانوں کے لیے میت کو دفن کرنے کا مسنون طریقہ یہ ہے کہ میت کو کفن دے کر قبر میں زمین پر لٹا دیں اور تختے دے کر مٹی ڈال دیں، تابوت یا صندوق میں بند کرکے دفن کرنا مسلمانوں کا طریقہ نہیں ہے، بلکہ عیسائیوں کا شعار ہے، البتہ اگر کوئی عذر یا سخت حاجت پیش آجائے، تو اس وقت لکڑی کے صندوق میں میت کو رکھ کر دفن کرنے کی گنجائش ہے، لیکن بلا ضرورت اسلامی طریقہ کو چھوڑنا اور غیروں کے طریقہ کو اپنانا درست نہیں ہے۔

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
دلائل:

کذا فی الشامیۃ:

ﻭﻟﻢ ﻳﺤﺘﺞ ﺇﻟﻰ التابوت، ﺇﻻ ﺇﻥ ﻛﺎﻧﺖ اﻷﺭﺽ ﻧﺪﻳﺔ ﻳﺴﺮﻉ ﻓﻴﻬﺎ ﺑﻠﻰ اﻟﻤﻴﺖ ﻗﺎﻝ ﻓﻲ اﻟﺤﻠﻴﺔ ﻋﻦ اﻟﻐﺎﻳﺔ: ﻭﻳﻜﻮﻥ التاﺑﻮﺕ ﻣﻦ ﺭﺃﺱ اﻟﻤﺎﻝ ﺇﺫا ﻛﺎﻧﺖ اﻷﺭﺽ ﺭﺧﻮﺓ ﺃﻭ ﻧﺪﻳﺔ ﻣﻊ ﻛﻮﻥ التابوت ﻓﻲ ﻏﻴﺮﻫﺎ ﻣﻜﺮﻭﻫﺎ ﻓﻲ ﻗﻮﻝ اﻟﻌﻠﻤﺎء ﻗﺎﻃﺒﺔ.

(قوله: ولا بأس باتخاذ تابوت إلخ) أي يرخص ذلك عند الحاجة، وإلا كره.

(کتاب الصلاة، باب صلاة الجنائز، ج2، ص234، دارالفکر)

کذا فی کفایت المفتی: ج5، ص487، ادارۃ الفاروق، کراچی

واللہ تعالٰی اعلم بالصواب
دارالافتاء الاخلاص، کراچی
Print Views: 371

Find here answers of your daily concerns or questions about daily life according to Islam and Sharia. This category covers your asking about the category of Funeral & Jinaza

Copyright © AlIkhalsonline 2021. All right reserved.

Managed by: Hamariweb.com / Islamuna.com